علی ظفر کیس میں عفت عمر اور علی گُل پیر کے وارنٹ گرفتاری جاری

علی ظفر کے خلاف میشاء شفیع نے ہراگی کیس دائر کیا تھا جس کے بعد انہوں نے دیگر اداکاروں اور قریبی دوستوں کے ساتھ مل کر سوشل میڈیا پر علی ظفر مخالف ایک مہم چلائی تھی جس پر عدالت کی جانب سے اداکارہ عفت عمر اور علی گل پیر کو عدالت میں پیشی کے لئے بار بار بلایا جاتا رہا اور دونوں نے کسی ایک پیشی میں بھی حاضری نہ دی۔

جوڈیشل مجسٹریٹ یوسف عبدالرحمان نے کیس کی سماعت کا تحریری فیصلہ جاری کیا جس میں اداکارہ عفت عمر کو ملزمہ قرار دے دیا گیا ہے کہ نہ وہ پیشی پر حاضر نہیں ہوئیں اور نہ کوئی قانونی جواز بھی پیش کرسکیں۔ ج پر ان کے قابلِ ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کیے اور اگلی سماعت پر لازمی پیش ہونے کا حکم دیا ساتھ ہی عدالت نے غیر حاضر ہونے پر علی گل پیر کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیے ہیں۔ فیصلے میں یہ بھی کہا گیا ہے کہ ملزمان لینی غنی ، فریحہ ایوب ، حسام الزمان اور فیضان رضا نے مستقل حاضری معافی کی درخواستیں دائر کیں کہ وہ کراچی میں رہتے ہیں اس لیے ہر پیشی پر نہیں آسکتے ۔ کراچی میں رہنے کی وجہ سے سماعت پر غیر حاضر ہونا کوئی ٹھوس جواز نہیں، لہٰذا قانون کی روشنی میں تمام درخواستوں کو مسترد کیا گیا ہے۔

Sharing is caring!

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *